Urdu Kahani rishta ye wafa ka | intresting urdu kahani with good lesson اردو سچی کہانی رشتہ یہ وفا کا

 رشتہ یہ وفا کا

محبت ہی تو زندگی ہے محبت ہی عبادت ہے محبت ہی دنیا ہے محبت ہی سنسار ہے ۔۔۔انسان سے محبت نکال۔دو تو باقی صرف درندگی رہ جاتی ہے۔۔۔۔

وہ مرد بھی کتنے خوبصورت ہوتے ہیں نا جو اپنی ہمسفر کو بے پناہ محبت عطا کرتے۔۔۔

وہ عورت بھی کتنی حسین ہوتی یے نا۔۔۔جو اپنے شہزادے کی سانس میں سانس لیتی ہے   یاد رہے فارس نکاح کے بعد والی محبت کی بات کر رہا ہے۔۔۔۔۔

 صدف کے بابا نے دو شادیاں کی تھیں۔۔۔۔۔پہلی بیوی سے 7 بیٹیاں تھیں بابا کو بیٹا چاہیے تھا   ۔اسلیئے انھوں نے دوسری شادی کر لی ۔۔اور دوسری بیوی سے دو بیٹے اللہ نے دیئے۔۔۔پھر ساری محبت دوسری بیوی کے لیئے ہو گئی پہلی بیوی اور بچوں کو اگنور کرنے لگے۔۔۔

بیٹیوں کو کہہ دیا۔۔۔اپنا اپنا جہیز خود بنانا ہے ۔۔۔جب بنا لو تو بیاہ دوں گا۔۔۔۔ہر دوسرے دن ۔۔گھر میں بھوک افلاس کی وجہ سے جھگڑا ہوتا۔۔۔۔

بابا ماں کو مارتے گالیاں دیتے۔۔۔۔

پھر بڑی بہنوں کی ایک ایک کر کے شادی ہو گئی۔۔۔

صدف بہت حساس تھی۔۔۔۔وہ چھوٹی   چھوٹی بات پہ رونے لگتی ۔۔۔کوئی سخت الفاظ کہہ دے تو آنسو پلکوں کو بھگو دیتے ۔۔۔

شادی سے ڈر لگتا تھا ۔۔اگر بابا جیسا ہمسفر ملا تو کیا کروں گی۔۔۔

بہت سمجھدار تھی لیکن  معصوم۔سی ۔۔۔

کافی رشتے آئے لیکن انکار کرتی رہی۔۔۔۔۔

یہ بھی پڑھیں اردو سچی کہانی دھڑکن رک نہ جائے

پھر ۔۔۔۔۔یوں ہوا۔۔۔۔انکار کے باوجود ۔۔۔۔اس کی شادی حارث سے ہو گئی۔۔۔حارث گندمی رنگ بلکل سادہ سا لڑکا ۔۔نہ کوئی فیشن نہ ماڈرن 

شادی ہو گئی ۔۔۔صدف ڈر رہی تھی۔۔۔۔نہ جانے کیسا انسان ہو گا۔۔۔

حارث ۔۔۔نے گھڑی کی جانب دیکھا۔۔۔12 بج گئے ۔۔عشق اور مغرب کی نماز قضا ہو گئی۔۔۔

حارث نے وضو کیا نماز ادا کرنے لگا۔۔۔صدف دیکھ رہی تھی ۔۔نماز پڑھتے ہوئے کتنا پیارا لگتا ہے ماشاللہ۔۔۔

نماز پڑھنے کے بعد پاس ایا۔۔۔

صدف ۔۔۔یہ گھر آپ کا ہے آپ اس گھر کی اور میری ذمہ داری ہیں ۔۔۔میں نہ تو یہ کہوں  گا میری عزت کا خیال رکھنا اور نہ کوئی نصیحت کروں گا۔۔۔میں بس اتنا کہوں گا۔جس عورت نے گناہ کرنا ہوتا یے وہ باحجاب باپردہ ہو کر لاکھوں پابندیوں کے باوجود بھی گناہ کر گزرتی ۔۔۔اور جس عورت نے عزت کا پاس رکھنا ہوتا ہے۔۔۔وہ سربازار بھی ہو تو بھی وہ خود کو گناہ سے پاک رکھتی ہے عورت کبھی پابندیوں کی غلام نہیں ہوتی۔۔۔ ۔۔میں آپ کو کبھی کوئی دکھ کا آنسو نہیں دوں گا۔۔۔

نہ تو میری طرف سے آپ پہ کوئی کسی قسم۔کی پابندی ہے اور نہ کوئی زبردستی ۔۔۔

صدف حارث کی باتیں سن کر حیران تھی۔۔۔۔یہ کیسا مرد ہے ۔۔۔جو اتنے نرم۔لہجے میں بات کر رہا ہے۔۔۔ورنہ آجکل کے مرد تو ۔۔۔۔وہ چپ ہو گئی۔۔۔

خیر زندگی کے دن گزرنے لگے۔۔۔۔

حارث کو تنخواہ ملی ۔۔۔۔آدھی تنخواہ امی ابو کو دی۔۔اور آدھی لا کر صدف کے ہاتھ پہ رکھی ۔۔صدف میری جان ۔۔یہ 15 ہزار روپے ہیں۔۔۔۔یہ تمہارے ہیں۔جیسے چاہو استعمال کرو۔۔۔صدف ۔۔۔پیار سے  بولی۔۔۔حارث میں نے پیسے کیا کرنے ہیں میرے سار اخراجات تو آپ پورے کر دیتے ہیں۔۔۔

حارث مسکرایا۔۔۔۔میری جان ۔۔۔۔یہ آپ کا حق ہے۔۔۔صدف کے دل۔میں محبت اور بھی بڑھنے لگی حارث کے لیئے ۔۔۔عزت بڑھنے لگی۔۔۔

یہ بھی پڑھیں اردو سچی کہانی یہ کون اجڑا تمہارے پیچھے

وہ دونوں بہت اچھی زندگی گزار رہے تھے ۔۔۔لیکن کچھ یوں ہوا ۔۔حارث کے بھائیوں نے کہا ہم اب الگ رہنا چاہتے ہیں۔۔۔

سب بھائی اچھی نوکریاں کرتے تھے ۔۔۔۔

سب نے اپنا الگ الگ گھر بنا لیا۔۔۔لیکن  حارث ۔۔۔بیچارا مزدور دار تھا ۔۔۔۔

وہ پرانے سے ٹوٹے ہوئے گھر میں رہ گیا۔۔۔

حارث بہت پریشان تھا ۔۔۔۔آہستہ سے بولا ۔۔۔امی کی وفات کے بعد بھائی رنگ  بدل گئے ہیں۔۔۔وہ جانتے بھی تھے میں مالی طور پہ بہت کمزور ہوں ۔۔۔لیکن میری پرواہ نہیں کی۔۔۔

صدف پاس بیٹھی۔۔ماتھے پہ بوسہ کیا۔۔۔۔

حارث اپ۔خود کو تنہا نہ۔سمجھیں۔میری جان ۔۔۔صدف آپ کے پاس اپ۔کے ساتھ ہے نا ۔۔

ہم۔کو کیا پرواہ کسی کی۔۔۔اللہ نے چاہا تو ہم۔بھی اہنا گھر پکا بنا لیں گے۔۔۔بھلا اداس کیوں ہونا۔۔۔دیکھیں تو ذرا اپنا چہرہ۔۔۔کیا حالت بنائی ہوئی ہے۔۔۔

چلیں آج میں آپ کی شیو کرتی ہوں۔۔۔وہ دونوں ہنسنے لگے۔۔۔

پھر کچن میں گئی۔۔۔حارث کی پسندیدہ بنڈی پکائی۔۔۔

اپنے ہاتھ سے کھلانے لگی۔۔۔

حارث اداسی میں بولا ۔۔۔صدف ۔۔مجھے معاف کر دینا ۔۔۔میں  آپ کو سب خوشیاں نہیں دے سکا۔۔۔۔

صدف مسکرائی ۔۔۔میری خوشی تو صرف آپ ہیں۔۔۔۔

میرے پاس آپ ہیں مجھے اور کچھ نہیں چایئے۔۔۔۔

پھر غربت کے دن اور بھی بڑھنے لگے ۔۔۔

رات کو کھانے کے لیئے کچھ نہیں تھا۔۔۔۔۔دونوں ۔۔چپ چاپ بیٹھے ہوئے تھے  ۔۔پچھلے دس دن سے بارش ہو رہی تھی۔۔۔۔کوئی دیہاڑی  بھی نہ لگی تھی  ۔۔۔

یہ بھی پڑھیں اردو سچی کہانی ساس کو پوتا چاہیے تھا

صدف ماں بننے والی تھی۔۔۔صبح سے بھوکی تھی۔۔۔۔

بل۔کی ادائیگی نہ کرنے پہ بجلی بھی بند تھی۔۔۔۔

حارث پاس آیا۔۔ صدف ۔۔۔۔میرا دل۔کرتا ہے میں خود کشی کر لوں ۔۔۔بہت تنگ آ گئا ہوں اس زندگی سے۔۔۔

آپ کو ایک وقت کی روٹی بھی نہیں کھلا سکتا۔۔۔صبح کا کچھ نہیں کھایا تم نے ۔۔۔تمہاری حالت خراب ہو جائے گی۔ایسے ۔۔۔

صدف مسکرائی۔۔۔تو کیا ہوا میری جان نہیں کھایا تو۔۔۔یوں سمجھ لیں روزہ رکھا ہوا ہے۔۔۔۔

وہ بات کرتے ہوئے رونے لگی۔۔۔۔حارث نے سینے سے لگا لیا ایم۔سوری میری جان مجھے معاف کرنا ۔۔۔۔۔صدف ۔۔۔آہستہ سے بولی آئی لو یو میرے حارث ۔۔۔۔

پریشان نہ ہوں آپ۔۔۔۔یہ وقت گزر ہی جائے گا ۔۔۔اللہ کرم۔کرے گا 

دوسرے دن حارث  دروازے پہ کھڑا تھا ۔۔۔بھائی کی بیٹی نظر آئی۔۔۔اسے کہنے لگا ۔۔بیٹی بات سن ۔۔بھتیجی پاس آئی جی چاچو ۔۔۔

حارث آہستہ سے بولا۔۔۔۔تم۔نے کیا پکایا ہے آج۔۔۔

بھتیجی بولی چاچو۔۔ہم۔نے تو بریانی پکائی ہے 

حارث بولا۔۔۔جا چوری سے ایک پلیٹ لا دو مجھے ۔۔۔کسی کو بتانا نہیں۔۔۔۔

بھتیجی ۔۔گھر گئی اپنی ماں سے کہنے لگی چاچو کہہ رہے ہیں ایک پلیٹ بریانی دے دو۔۔۔ماں نے ڈانٹا توں اس فقیر کے پاس گئی کیوں تھی ۔۔۔دفعہ کر اسے ۔۔۔

ہم نے کوئی لنگر خانہ نہیں کھول رکھا۔۔۔

وہ انتظار کرتا رہا لیکن  بھتیجی نہ آئی۔۔۔

دوسرا دن تھا وہ بہت بھوکے تھے بارش ابھی بھی ہو رہی تھی ۔۔۔حارث نے اہنا موبائل بیچ دیا۔۔۔

پھر کچھ کھانا خریدا گھر آیا۔۔۔خود اپنے لیئے کھانا نہیں خریدا ۔۔۔گھر ایا مسکراتے ہوئے بولا صدف دیکھو کیا لایا ہوں میری جان ۔۔۔۔تمہارا فیورٹ پیزا۔۔۔۔صدف چونک گئی۔۔۔حارث۔۔۔پیسے کہاں سے لیئے آپ نے ۔۔۔حارث مسکراتے ہوئے ۔۔ارے جان سب باتیں بعد میں  کریں گے۔۔۔پہلے کھا لو نا۔۔۔

صدف پاس بیٹھی پیار سے بولی۔۔۔۔حارث یہ پیسے کہاں سے لیئے آپ نے۔۔۔

حارث پھر مسکرایا ۔۔۔او جی کر لو بات ۔۔موبائل خراب تھا ۔میں سوچا ۔۔۔نیا لے لوں گا ۔۔پرانا آواز بھی ٹھیک سے نہیں آتی تھی اس میں وہ بیچ دیا۔۔۔

صدف نے حارث کا ہاتھ چوم لیا۔۔۔حارث ۔۔۔کیا ضرورت تھی۔۔۔آپ۔بھی نا۔۔۔

 اپنے ہاتھ سے کھانا کھلایا ۔۔۔

صدف سوچنے لگی ۔۔۔امی کو بتاوں گی اپنے حالات تو پریشان ہو جائیں گی ۔۔پہلے ہی بابا ہم کو منہ نہیں لگاتے۔۔۔

صدف ۔۔۔حارث سے کہنے لگی ۔۔حارث میری جان ۔۔ایک بات ہوچھوں آپ سے۔۔حارث نے ہاں میں سر ہلایا۔۔

جان کیا محلے کے بچوں کو ٹیوشن پڑھا لیا کروں۔۔ساتھ میں کپڑے بھی سلائی کرنا شروع کر دوں ۔۔۔

حارث ۔۔۔آہستہ سے بولا صدف ۔۔پہلے ہی آپ کی صحت ٹھیک نہیں ہے خود کو کیوں تھکاو گی ۔۔۔

لیکن صدف نے بچوں کو ٹیوشن پڑھانا شروع کر دیا۔۔۔۔حارث بھی کام پہ جانے لگا۔۔۔

یہ بھی پڑھیں اردو سچی کہانی شانو مر گئی

اللہ نے ان کو بیٹا عطا کیا ۔۔۔۔صدف پڑھی لکھی تھی ۔۔۔بچوں کو بہت پیار سے پڑھاتی تھی۔۔۔۔سب لوگ اپنے بچوں کو صدف کے پاس بیجھتے ۔۔۔اللہ نے کرم کیا دو وقت کی روٹی صدف کمانے لگی ۔۔جو پیسے حارث کماتا وہ بچا لیتی ۔۔دونوں نے بہت محنت کی۔۔۔صدف قدم کے ساتھ قدم ملا کر چلتی رہی ۔۔۔۔۔پھر اللہ پاک کا کرم ہوا۔۔انھوں نے گھر بنا لیا ۔۔۔صدف نے ایک چھوٹی سی اکیڈمی بنا لی ۔۔۔۔

دیکھتے دیکھتے زندگی خوشگوار ہو گئی ۔۔۔

صدف اکیڈمی میں بچوں کو پڑھا رہی تھی ۔۔۔حارث نے کچن میں کھڑے ہو کر فون کیا ۔۔صدف ۔۔۔میں نے ڈال چاول بنا دیئے ہیں۔۔۔اب برتن تم نے دھونے ہیں ۔۔اب میں بازار جاوں تھوڑی دیر کے لیئے دوستوں کے پاس ۔۔۔صدف ۔۔۔آہستہ سے بولی۔۔۔حارث۔۔گھر میں آپ کو سکون نہیں ہے کیا۔۔۔۔جائیں لیکن ایک گھنٹے میں واپس آ جانا ۔۔۔۔

اصل میں دونوں نے ایک دوسرے سے وفا نبھائی تھی۔۔۔ہر حال میں ساتھ رہے ۔۔۔ایک دوسرے کی عزت کی ایک دوسرے کو سمجھ کر چلے ۔۔۔صبر سے کام لیا۔۔۔۔اج صدف کے 3 منزلہ گھر ہے ۔۔۔۔حارث نے گارمنٹس  کی بڑی دکان بنا لی ہے ۔اکیڈمی اب سکول میں بدل چکی ہے ۔۔۔اللہ نے رحمتوں کی برسات کر دی ان دونوں پہ ۔۔

فارس ہر مرد عورت سے مخاطب ہوتا یے۔۔خدارا ۔۔۔ایک دوسرے کی عزت کرنا سیکھو ۔۔صبر کرنا سیکھو ۔۔۔

آجکل مرد تو خود کو حکمران  سمجھتا ہے جیسے بیوی نہیں کوئی غلام بیاہ کر لایا ہو۔۔۔کھانا ٹھنڈا دینے پہ گالی خواہش ظاہر کرنے پہ گالی حق مانگنے پہ گالی خاموشی رہنے پہ ظلم ۔کی انتہا کرتے ہیں بیوی پہ۔۔

اور دوسری جانب ۔۔عورت بھی کم نہیں ہے ۔۔۔اچھا موبائل نہیں لے کر دیا تو جھگڑا۔۔عید پہ نئے کپڑے نہیں لیکر دیئے تو جھگڑا۔۔۔کبھی الگ رہنے کی ضد تو کبھی خرچہ نہ ملنے پہ تماشہ ۔۔اور پھر رفتہ رفتہ گھر اجڑ جاتے ہیں۔۔۔

یہاں ہر عورت کو صدف اور ہر مرد کو حارث بنا ہو گا ۔ہر حال میں ایک دوسرے کا ساتھ نبھانا ایک دوسرے سے وفا کرنا سب سے بڑھ کر ایک دوسرے کی عزت کرنا۔۔۔

جب میاں بیوی میں محبت قائم۔ہو تو اللہ بھی رحمت برسا دیتا یے حالات کیسے بھی ہوں مقام کوئی بھی ہاتھ میں ہاتھ تھامے ایک دوسرے کا ساتھ نبھانے کا نام ہی نکاح ہوتا ہے  ۔۔۔

یہ بھی پڑھیں اردو سچی کہانی بابا کی پری

گھروں کو اجاڑنے سے بہتر ہے چھوٹی سی زندگی میں محبتیں آباد کریں ۔۔۔

سمجھو تو زندگی سا حسین کچھ بھی نہیں۔۔۔آنا غرور اور ناسمجھی سے کام لو گے تو زندگی سے بدتر کچھ بھی نہیں 

فیصلہ آپ کا ہے ۔۔۔صرف ایک فیصلہ ۔۔۔



Post a Comment

0 Comments